Ab Se Tumhara Dil Mera Huwa By Mehwish Khan

Posted on

Ab Se Tumhara Dil Mera Huwa By Mehwish Khan complete Urdu novel based on social issues, age differences, cousin marriage, romantic, family system-based, kidnapping-based, funny, contract marriage, forced marriage, army-based books, etc.

میں تمہارے لیے کتنا پریشان ہوں ۔۔۔۔ تین دن سے سویا نہیں کہ کہیں میرے سوتے ہوے جان کو ہوش نہ آجاۓ اور وہ کسی کو وہاں نہ پاکر پریشان نہ ہوں اور ادھر محترمہ کو اپنے بھاٸی کے علاوہ کچھ دکھتا ہی نہیں ہے ۔۔۔۔۔ ”تمہارے پاس تو مجھے توجہ دینے کے لیے دو منٹ بھی نہیں ہے ۔۔۔۔تم سے میں کچھ اور امید کیا رکھوں “ ۔۔۔۔۔وہ افسوس سے بولا ”تمہیں نہ میرا خیال ہے اور نہ میری محبت کی قدر ۔۔۔۔۔ تمہیں صرف اپنی زندگی میں عقبہ بھاٸی چاہیے ۔۔۔۔

میری تو تمہاری زندگی میں کوٸی جگہ نہیں ہے ۔۔۔۔حتی کہ میرے ہونے یا نہ ہونے سے بھی تمہیں فرق نہیں پڑتا“ ۔۔۔۔۔۔وہ کرب سے اسکی آنکھوں میں دیکھتے ہوۓ بولا ۔۔۔۔ ”بلکہ نہیں تم میرے نہ ہونے سے زیادہ خوش ہوتی ہوں ۔۔۔۔۔وہ رک کر اسکے بولنے کا انتظار کرنے لگا لیکن وہ خاموش تھی ۔۔۔۔ وہ تو اسے ایک دم غصے میں بولتا دیکھ کر شاکٹ حالت میں اپنا رونا تک بھول گٸی تھی اسے جواب کیا خاک دیتی ۔۔۔۔۔ ”تو ٹھیک ہے میں تمہاری زندگی سے چلا جاٶں گا ۔۔۔۔۔تمہاری خوشی سر آنکھوں پر خدا پیمان “۔۔۔۔۔۔وہ ایک دم جھٹکے سے اٹھ کر اسکو ششسدر حالت میں چھوڑ کر جانے لگا تو جان نے ہوش میں آتے ہوۓ فورا اسکا ہاتھ پکڑلیا ۔۔۔۔۔ ریان غصے میں چاہ کر بھی اسکے ہاتھ کو جھٹک نہ سکا ۔۔۔۔

”ریان “۔۔۔۔۔بہت پیار سے پکارا گیا تو وہ بغیر مڑے رک گیا ۔۔۔۔ ”ناراض ہوں مجھ سے ؟“۔۔۔۔۔جان کے کہنے پر ریان نے مڑ کر دیکھا تو جان کی آنکھیں بہت معصومیت سے اسکی خفگی کے بارے میں پوچھ رہی تھی ۔۔۔۔۔ ”نہیں ۔۔۔۔۔میں تم پر غصہ ہوں “ریان نے اسکے برابر بیٹھتے ہوۓ منہ پھلا کہا اور دوسری طرف منہ کرلیا ۔۔۔۔۔۔۔ ”لیکن میں تو بیمار ہوں ۔۔۔۔دیکھو ڈرپ بھی لگی ہے ۔۔۔۔۔اسنے ڈرپ والا ہاتھ بلند کیا ۔۔۔

” مریضوں پر تو غصہ نہیں ہوتے نہ “۔۔۔۔۔۔جان نے معصوم بننے کی اداکاری کرتے ہوۓ کہا تو ریان نے اسے خفگی سے گھورا ۔۔۔۔جس پر اسنے معصوم سی صورت بنالی ۔۔۔۔۔ ” ہاں مریض چاہے کچھ بھی کرتے رہے ، ہم ان پر غصہ نہ ہو “۔۔۔۔ریان کے کہنے پر جان نے ایک نظر اسے دیکھا پھر بولی ۔۔۔۔ ”تم پٹھان ہوں ۔۔۔۔پٹھان مرد اپنی بیوی سے ناراض ہوتا ۔۔۔۔۔ اسپر غصہ کرتا بالکل اچھا نہیں لگتا ۔۔۔ خان صاب سمجھے یا سمجھاۓ “جان کے خالص پشتون لہجے میں کہنے پر ریان ناچاہتے ہوۓ بھی مسکرا اٹھا ۔۔۔۔۔

اس سے ناراض ہونا ریان کے لیے ویسے بھی مشکل تھا ۔۔۔۔ ”سمجھاٶ نہ دلبرو ۔۔۔۔۔ہم تو کب سے تمہارے سمجھانے کا انتظار کررہا ہے “۔۔۔۔ریان نے اسپر جھکتے ہوۓ گھمبیر لہجے میں کہا جس پر وہ ایک دم سٹپٹاسی گٸی ۔۔۔۔ وہ اسکے گھبرانے پر محظوظ ہوا اور اسکے دونوں طرف ہاتھ رکھ کر اسپر جھکا ۔۔۔۔۔اسکا چہرہ شرم سے گلابی تھا اور اسکی پلکیں حیا۶ سے کپکپانے لگی ۔۔۔۔۔ ریان نے اسکے ماتھے پر اپنے لب رکھے اور سیدھا ہوگیا ۔۔۔۔

Dive into the Depths of Emotion and Discovery with ‘Ab Se Tumhara Dil Mera Huwa By Mehwish Khan: A Tale of Love, Identity, and the Life Journey Within.

Ab Se Tumhara Dil Mera Huwa By Mehwish Khan in Pdf

Ab Se Tumhara Dil Mera Huwa By Mehwish Khan

ناول کا پی ڈی ایف ڈاؤن لوڈکرنے کے لیے ڈاؤن لوڈ کے بٹن پرکلک کریں

👇

or

ناول کوپڑھنے کے لیےیہا ں کلک کریں

👇

Novel Galaxy is a world of Urdu novels based on social issues, rude heroes novels, Urdu revenge base novels, Urdu E-book, Urdu digest, Urdu horror and thriller novels, etc. All novels are also available online and in PDF form.

You might also like these NOVELS

Leave a Comment