Hum Pakistani Mujahid Hein By Tayyaba Chaudhary

Posted on

Hum Pakistani Mujahid Hein By Tayyaba Chaudhary complete Urdu novel based on social issues, age differences, cousin marriage, romantic, family system-based, kidnapping-based, funny, contract marriage, forced marriage, army-based books, etc.

“اوہ شیٹ…….” ثمر جو ابھی ابھی وہاں آیا تھا ان کو یوں جھگڑتے دیکھ خوف زدہ ہو گیا۔ “کیوں تم لڑوا رہے ہو ان دونوں کو؟ کون ہے یہ بندہ؟ چھڑواؤ ان کو۔” وہ تیزی سے آگے بڑھا تھا اور پرنس کے پاس جا کھڑا ہوا۔ “یہ افنان رندھاوا ہے۔ آئی ایس آئی کا بندہ اور دوسرے کو تو تم جانتے ہی ہو نا۔

جھگڑنے دو ان کو مشن پہ اگر یوں ہی لے گئے تو ککڑوں کی طرح ایک دوسرے کو ٹھونگیں مارتے رہی گے۔ آؤ بیٹھو تم بھی انجوائے کرو۔” اس نے مسکراتے ہوئے اپنے ساتھ پڑی خالی جگہ کی جانب اشارہ کیا۔ “خدا کا خوف کرو اے کے! دیکھو کیسے خون و خون ہو رہے ہیں یہ دونوں۔ مشن پہ کیا زخمیوں کو لے کر جاؤ گے؟” وہ اپنا فون صوفے پہ اچھال کر کہتے ہوئے ان کی جانب بڑھا۔

“Stop Grappling guys.” اس نے افنان کا ہوا میں بلند ہوئے ہاتھ کو تھام کر پیچھے کھینچا۔ اسفار کی ناک میں سے خون بہہ رہا تھا تو افنان کے منہ سے۔ “Don’t play fool.” وہ دونوں ہی باز نہیں آئے تھے۔ “اسفار! چھوڑو اسے افنان! تم بھی چھوڑو۔بس کرو……” وہ بوکھلا چکا تھا مگر وہ دونوں اب کھڑے ہوتے ہوئے جھگڑنے لگے۔

ثمر تیزی سے ان کے درمیان آیا تو اس کی بھی خوب پٹائی ہو گئی۔ “ہمارے درمیان میں مت آؤ ثمر! اس کومیں اب چھوڑ دوں…… It’s Out of the question.” ثمر کو ایک جانب دھکیل کر وہ ناک سے بہہ رہے خون کو انگوٹھے کی لو سے صاف کرتے ہوئے بولا۔ کچھ دیر مزید مکے بازی چلتی رہی جس میں زیادہ تو ثمر نے ہی کھائے تھے۔ “کہاں ہیں تمہارے ساتھی؟ دیکھو اگر مزید مار نہیں کھانا چاہتے تو بتا دو۔” کمر پہ ہاتھ ٹکا کر اسفار نے گہری سانس خارج کرتے ہوئے کہا۔

وہ جیب سے ٹیشو نکال کر منہ کا خون صاف کرتے ہوئے ہنستا چلا گیا۔ “Think our it well.” اسفار نے بھنویں آچکائے۔ “سوچ لیا نہیں بتاتا جا جو کرنا ہے کر۔” وہ ہمیشہ کی طرح اسے مزید تپا رہا تھا۔ “اب لگتا ہے دونوں تھک گئے ہیں جا ثمر! فرسٹ ایڈ باکس اٹھا لا۔” پرنس نے مسکراتے ہوئے کہا اور اٹھ کر ان دونوں کی جانب بڑھ گیا۔

“کیسے ہو تم؟” وہ افنان کو گلے لگاتے ہوئے گویا ہوا۔ “اپنے دوست سے پٹوا کر پوچھ رہے ہو کیسے ہو۔” وہ اس کی پیٹھ پہ تپھکی دے کر پیچھے ہٹا۔ “ہا…… ہاہاہا ویسے فائٹر تم دونوں ہی کمال کے ہو۔ شکر ہے تم نے کراٹے کا یوز نہیں کیا۔ خیر……” وہ ہنستے ہوئے اسفار کی جانب گھوما جو حیرت سے ان دونوں کو تکے جا رہا تھا۔ “اسفار! یہ افنان رندھاوا ہے آئی ایس آئی کا ہونہار اسپائی۔”

“واٹ…….؟تمہارا دماغ ٹھیک ہے پرنس! یہ آدمی کچھ بھی بکتا ہے۔ شکل سے یہ لگتا ہے کہ یہ پاک اسپائی ہے۔” وہ بھڑک اٹھا تھا۔ افنان نے بالوں کو ہاتھ سے سنوارتے ہوئے جلانے والی مسکراہٹ اس کی جانب اچھال نفی میں سر ہلایا۔ “اب تمہارا کیا ارادہ ہے تمہاری طرح سب کو بتاتا پھروں کہ دیکھو دیکھو میں ہوں ہونہار اسپائی جس نے اپنی چوبیس سالہ عمر میں بہت بڑے بڑے کیس تو حل کیے ہی ہیں اور ایک بچے کا باپ بھی ہوں۔”

وہ اس انداز سے گویا ہوا کہ پرنس کی بےاختیار ہنسی چھوٹ گئی۔ “دیکھا اے کے! اس کی باتیں سنوں۔ اتنا بدتمیز اور لفنگا لڑکا ہے یہ۔ ضرور تمہیں بیواقوف بنا رہا ہو گا۔یہ آئی ایس آئی کا بندہ تو لگتا ہی نہیں۔فراڈ ہے۔” “ہر کسی کو اپنی طرح کا ناسمجھ سمجھ رکھا ہے کیا تم نے؟” پرنس کی بجائے افنان نے جواب دیا تھا۔ “What are you blabbing?” وہ دانت پہ دانت جمائے آگے بڑھا۔ “ہا……بکنے کی عادت ہے۔ تو کیا کروں؟”

Dive into the Depths of Emotion and Discovery with ‘Hum Pakistani Mujahid Hein’ By Tayyaba Chaudhary: A Tale of Love, Identity, and the Life Journey Within.

Hum Pakistani Mujahid Hein By Tayyaba Chaudhary in Pdf

Hum Pakistani Mujahid Hein By Tayyaba Chaudhary

ناول کا پی ڈی ایف ڈاؤن لوڈکرنے کے لیے ڈاؤن لوڈ کے بٹن پرکلک کریں

👇

or

ناول کوپڑھنے کے لیےیہا ں کلک کریں

👇

Novel Galaxy is a world of Urdu novels based on social issues, rude heroes novels, Urdu revenge base novels, Urdu E-book, Urdu digest, Urdu horror and thriller novels, etc. All novels are also available online and in PDF form.

Top Categories of Urdu Novels 

 Here, you will find a list of Urdu novels from all categories that can easily be downloaded in PDF format and saved into your devices/mobile with just one click.

There’s no content to show here yet.

You might also like these NOVELS

Leave a Comment