Mein Ashiq Deewana Tera By Areej Shah

Posted on

Mein Ashiq Deewana Tera By Areej Shah complete Urdu novel based on social issues, age differences, cousin marriage, romantic, family system-based, kidnapping-based, funny, contract marriage, forced marriage, army-based books, etc.

اسے آہستہ اسے بولتے دیکھ کر وہ معصومیت سے بولی وہی تو میں کہہ رہا ہوں میری جان تھوڑا زیادہ کھایا کرو اپنی جان بناؤ مجھے برداشت کرنا بچوں کا کام نہیں ہے وہ سمجھاتے ہوئے اینڈ پر شرارت سے بولا جس پر وہ جھنبپ کر رہ گئی آپ نا بہت وہ ہیں اسے کوئی بات سوج نہیں رہی تھی رومینٹک ہاں میری جان میں جانتا ہوں میں بہت رومنٹک ہوں لیکن ابھی تم نے مجھے رومینٹک ہونے کا موقع کہاں دیا ہے

وہ اس کی بات پکڑتے ہوئے بولا جب کہ وہ منہ کھول کر رہ گئی ۔ میں نہیں بات کروں گی آپ سے آپ ایک انتہائی بے شرم انسان ہیں وہ اپنے گالوں کی سرخی چھپاتے ہوئے اٹھ کر بھاگنے لگی جب زاوق نے اسے کمر سے پکڑ لیا ایسے کیسے میری جان ابھی تو تم باتوں پر گھبرا رہی ہوں جب میں عمل کر کے دکھاؤں گا تب تمھارا کیا بنے گا وہ شرارت سے اس کے گال کھینچتے ہوئے بولا آپ مجھے چھوڑ دیں ورنہ میں ۔۔۔۔۔

ورنہ تم مجھے کس کرو گی ہے نا ذرا سوچو ہماری شادی کو ایک ہفتہ ہو چکا ہے اور ابھی تک تم نے مجھے ایک چھوٹی سی کسی بھی نہیں دی کتنی بورنگ ہو تم ایسے تو میرا گزارہ نہیں ہوگا اگر تم یہاں سے جانا چاہتی ہو تو تم میری خواہش پوری کرو ورنہ آج میں اپنی خواہشیں پوری کرنے کے موڈ میں ہوں ۔ وہ اس کے لبوں پر انگوٹھا پھرتا بہکےہوئے انداز میں بولا زاوق مجھے جانے دیں پلیز وہ نظریں جھکائے معصومیت سے بولی

تو اس کی اس معصومیت پر اسے ٹوٹ کر پیار آیا ایسے مت کرو جان ورنہ میں خود ہی تو میں کس کرلوں گا اور میری کس تمہاری کس طرح چُونی مونی کسی نہیں ہوگی ۔مکمل کس ہوگا جو ہوسکتا ہے تم برداشت نہ کر سکو اب وہ مکمل اسے اپنی باہوں میں قید کر چکا تھا زاوق پلیز وہ ہلکی سی مزاحمت کرتے ہوئے بولی لیکن آج سامنے والا مزاحمت کے موڈ میں نا تھا ۔ اس سے پہلے کہ وہ مزید مزاحمت کرتی وہ بہکے ہوئے انداز میں اس کے لبوں پر جھکا تھا

اور اس کا اندازہ وہی تھا ہمیشہ سے شدت والا احساس نے سختی سے اس کے شرٹ کے کالر کو پکڑا نہ جانے کتنی دیر یہ میٹھا لمس محسوس کرتے ہوئے تو پیچھے ہٹا ۔ احساس کے سامنے آنکھیں بند کی ہے تیز تیز سانس لے رہی تھی اس نے نرمی سے اس کے ماتھے کو چھوا جاؤ آرام کرو شام کو ملتے ہیں ۔ وہ اس کے ماتھے کو چومتا فورا باہر نکل آیا

Dive into the Depths of Emotion and Discovery with ‘Mein Ashiq Deewana Tera’ By Areej Shah: A Tale of Love, Identity, and the Life Journey Within.

Mein Ashiq Deewana Tera By Areej Shah in Pdf

Mein Ashiq Deewana Tera By Areej Shah

ناول کا پی ڈی ایف ڈاؤن لوڈکرنے کے لیے ڈاؤن لوڈ کے بٹن پرکلک کریں

👇

or

ناول کوپڑھنے کے لیےیہا ں کلک کریں

👇

Novel Galaxy is a world of Urdu novels based on social issues, rude heroes novels, Urdu revenge base novels, Urdu E-book, Urdu digest, Urdu horror and thriller novels, etc. All novels are also available online and in PDF form.

You might also like these NOVELS

Leave a Comment