Parizaad by Hashim Nadeem

Posted on

Parizaad by Hashim Nadeem complete Urdu novel based on social issues, age differences, cousin marriage, romantic, family system-based, kidnapping-based, funny, contract marriage, forced marriage, army-based books, etc.

میں خود کو بہت مضبوط سمجھتا تھا پری زاد۔۔لیکن یہ محبت بڑے بڑے تنادر درختوں کو دیمک کی طرح کھا کر ڈھا سکتی ہے۔۔۔یہ احساس مجھے بہت دیر میں ہوا۔۔میں نے اپنے لیے سزا اس لیے تجویز نہیں کی کیونکہ میں نے اسے مات ڈالا۔

میں نے خود کو یہ سزا اس لیے دی ہے کہ وہ مجھ سے محبت نہیں کرتی تھی جب کے میں اسی کی محبت میں سے بااثر بڑھ گیا تھا کہ مجھے احساس ہی نہیں ہوا کی اب میری واپسی نا ممکن ہے۔یہ راز تب کھلا جب وہ دنیا سے جا چکی تھی۔

تب میں نے جانا کہ میں بھی اس کے بنا جی نہیں پاوں گا۔اگر مزید زندہ رہتا تو یہ منافقت تھی اور بہروز نے آج تک ہر گناہ کیا سوائے منافقت کے۔۔۔ اس نے مجھے آخری مرتبہ بھینچ کر گلے لگایا اور اپنا خیال رکھنا ۔۔بہت قیمتی ہو تم ۔۔۔مگر نہ جانے کیوں۔۔۔خود کو اتنا ارزاں کر رکھا ہے ۔۔ میں ایک بار پھر رو پڑا۔بہروز سے رخصت ہونا دنیا کا سب سے مشکل کام تھا

مگر سپاہی میرے سر پر اکھڑا تھا ہوا واپسی پر فیروز خان کی کوٹھڑی کے پاس رک گیا وہ آہٹ سن کر سلاخوں کے قریب آگیا میں نے نم پلکوں سے اس کا استقبال کیا۔۔ جارہے ہو فیروز۔۔۔؟ وہ دکھ سے مسکرایا۔۔ایک نہ ایک دن تو جانا ہی تھا۔مالک کے ساتھ ہی چلا جاوں تو بہتر ہے میں نے ان کی زندگی کی حفاظت کی قسم کھا رکھی تھی۔دعا کرو کہ کل مجھے ان سے پہلے موت کے گھاٹ اتار دیا جائے ورنہ میں اوپر جا کر خدا کو کیا منہ دکھاوں گا۔۔۔؟

میں نے فیروز کا کاندھا تھپتھپیا۔تم سے بڑھ کر وفاداری اس دنیا میں بھلا کسی اور نے کیا نبھائی ہوگی۔بے وفا تو ہم سب ہیں۔جنہیں تم یہاں تنہا کسی آسرے کے بغیر چھوڑے جارہے ہو۔۔کہاں ملے گا اب مجھے تم جیسا سچا اور وفادار دوست۔۔۔ فیروز خان مسکرایا۔پاکستان میں میرا ایک بھائی ہے کبیر خان بلا لینا۔۔ہم دونوں کا ایک ۔۔اب تم جاو پری زاد۔مجھے اپنی آخری عبادت کرنی ہے شاید آخری سجدہ ہی وہاں کام آجائے

۔۔ورنہ عمر تو بس رائیگاں گئی ۔۔۔ میں آنکھوں میں آنسوں لیے بوجھل قدموں سے وہاں سے چلا آیا بہروز اور اس کے وفادار فیروز کی آخری رسومات ایک ساتھ ادا کر کے انہیں اسی شہر میں دفنا دیا گیا جہاں انہوں نے عروج کی آخری منزل سرکی تھی اور جہاں وہ ایک ساتھ زوال پذیر ہوگئے۔بہت دنوں تک تو مجھ سے کچھ بولا ہی نہیں گیا۔

غم کی شدت شاید ہماری قوت گویائی بھی سلب کر لیتی ہے۔میں گھنٹوں بڑے ہال میں گم سم بیٹھا اس بڑے سفید پیانو کو دیکھتا رہتا تھا جیسے لیلی صباہ بیٹھ کر کھبی بجایا کرتی تھی۔شاید اس کی نازک انگلیوں کے نشانات بھی ابھی تک اس پیانو کے سروں پر ثبت ہوں گے میرا جی ہی نہیں مانتا تھا کہ میں اپنے ہاتھ لگا کر اس کے نشان مٹا دوں۔پھر ایک شام مارتھا واپس اگئی

اور مجھے دیکھ کر پھوٹ پھوٹ کر رو پڑی۔وہ انگلینڈ اپنی سوتیلی ماں کو ملنے گئی ہوئی تھیں جب یہ ساری واردات ہوئی۔میں نے مارتھا کو پھر سے کام پہ رکھ لیا اور انیکسی میں شفٹ ہو جانے کے لیے درخواست بھی کی۔جانے کیوں وہ مجھے اس محل اور لیلی صباہ کا ایک حصہ نظر آتی تھی۔

Dive into the Depths of Emotion and Discovery with ‘Parizaad’ by Hashim Nadeem: A Tale of Love, Identity, and the Life Journey Within.

Parizaad by Hashim Nadeem in Pdf

Parizaad by Hashim Nadeem

ناول کا پی ڈی ایف ڈاؤن لوڈکرنے کے لیے ڈاؤن لوڈ کے بٹن پرکلک کریں

👇

or

ناول کوپڑھنے کے لیےیہا ں کلک کریں

👇

Novel Galaxy is a world of Urdu novels based on social issues, rude heroes novels, Urdu revenge base novels, Urdu E-book, Urdu digest, Urdu horror and thriller novels, etc. All novels are also available online and in PDF form.

Top Categories of Urdu Novels 

 Here, you will find a list of Urdu novels from all categories that can easily be downloaded in PDF format and saved into your devices/mobile with just one click.

There’s no content to show here yet.

You might also like these NOVELS

Leave a Comment