Uraan by Qanita Khadija

Posted on

Uraan by Qanita Khadija complete Urdu novel based on social issues, age differences, cousin marriage, romantic, family system-based, kidnapping-based, funny, contract marriage, forced marriage, army-based novels, etc.

’’فلک‘‘ اسنے پکارا، وہ مڑی مگر اس بار اسکی پکار الگ تھا اور احساسات بھی، ایک ہاتھ پیٹھ کے پیچھے کیے وہ اب ایک عجیب کشمش میں تھا، اسے سمجھ نہیں آرہی تھی کہ وہ کیا کرے۔ ایک لمبی سانس بھرتے ہوئے وہ لمبے قدم اٹھاتا اسکی طرف بڑھا جو کہ اب اپنی جگہ پر جمی ہوئی تھی، اور بنا کچھ کہے اسکا بائیں ہاتھ کی تیسری انگلی میں وہ انگوٹھی پہنا دی، البتہ نگاہے اسکی نیچی رہی۔

’’یہ کیا کر رہےہو؟‘‘ اسنے انگوٹھی کی طرف اشارا کیا ’’وہی جومجھے کرنا چاہیے‘‘ ’’جانتی ہواسکا مطلب کیا ہے؟ کہ اب تم پر میرا حق ہے‘‘ اسکے ہاتھ میں دمکتی اس انگوٹھی کو غور سے دیکھتے وہ گویا ہوا۔ ’’پچاس والی انگوٹھی دے کر تم مجھ پر حق جمانے لگے ہوں‘‘ وہ ہنستے ہوئے اس سے گویا ہوئی جس پر وہ مسکراہ کر رہ گیا۔

’’انگوٹھی بھلے ہی پچاس کی ہوں، مگر اس میں چھپی کڑوڑوں جیسی میری محبت کا کوئی نعم البدل نہیں، اور حق کی بات تو مت ہی کروں فلک خان وہ تو میں شروع سےتم پر رکھتا ہوں‘‘ آنکھوں میں محبت سموئے وہ اس سے گویا ہوا۔ ’’کتنی محبت کرتے ہوں مجھ سے شاہ؟‘‘ حالانکہ وہ جواب جانتی تھی مگر پھر بھی پوچھنا ضروری سمجھا۔

’’اتنی کے اگر تم ریان کو ہاں کہہ دیتی تو خوشی خوشی اپنی محبت سے دستبردار ہوجاتا‘‘ اسکی آنکھوں میں آنکھیں ڈالے وہ گویا ہوا۔ وہ اظہار کرے گا اسے معلوم تھا مگر ایسا اظہار تو کیا وہ سب جانتا تھا؟ ’’ہاں میں سب جانتا ہوں‘‘ اسکی آنکھوں میں رقم سوال کو دیکھ کر وہ بول اٹھا۔ ’’ویسے ایک بات کہوں اگر میری محبت کا اقرار تم ریان کی جگہ مجھ سے کرتی تو مجھے زیادہ خوشی ہوتی

‘‘ اسکی اس بات پر فلک کے گال دہکنے لگے، وہ بلش کی تھی شاہ چاہتا تو اسے چھیڑتا مگر ابھی اتنا بھی حق نہیں تھا اور وہ یہ جانتا تھا۔ ’’اگر دنیا نے ہم پر پہرے بٹھا دیے‘‘ اسنے اپنا اندیشہ ظاہر کیا۔ ’’تو کیا ہوا میں خان کو ہم پر پہرے بٹھانے نہیں دو گا‘‘ ’’میں نے دنیاکی بات کی ہے شاہ‘‘ ’’اور دنیا سے مراد خان ہی ہے یہ میں اچھے سے جانتا ہوں، فکر مت کروں فلک تمہارا شاہ تمہیں کسی اور کا نہیں ہونے دے گا

‘‘ اسکی فکر کم کرتے ہوئے وہ گویا ہوا۔ ’’ویسے یہ پچاس کی انگوٹھی لی کہاں سے؟‘‘ ماحول کو ہلکہ پھلہ کرتی وہ بولی۔ ’’پٹھانوں سے‘‘ کہتے ہی اسنے زبان دانتوں میں دبا لی کیونکہ سامنے کھڑی وہ بھی پٹھان تھی یہ تو وہ بھول ہی گیا تھا۔ اور ایک نظر اسکا چہرا دیکھا جو اب شرم کی بجائے غصے سے لال ہوچکا تھا۔ ’’تم!!‘‘ وہ چیخی۔ ’’اچھا قسم لے لو پورے پانچ سو کی انگوٹھی لی تھی

میں نے پچاس کی تو تمہیں لگی‘‘ اپنا بچاؤ کرتے وہ بولا، اور وہاں سے بھاگ نکلا ’’ہارون شاہ تم ہوگے میرے ہاتھوں‘‘ وہ اسکے پیچھے دوڑی ’’شادی سے پہلے بیوہ ہوجاؤ گی تم، اور پھر میری تصویر گلے سے لگائے روؤ گی اور کہوں گی کہ شاہ واپس آجاؤ‘‘ وہ تو مذاق میں کہہ چکا مگر اس مذاق نے فلک کو اندر تک ہلا دیا تھا۔ ’’اللہ نا کرے

‘‘ اپنے آنسوؤ پر ضبط کرتے وہ اتنا ہی بول سکی،جبکہ اسکی بڑبڑاہٹ سن کر شاہ کے ہونٹ پھیل گئے۔ ’’سنو! آئی لو یو‘‘ اسکے کان میں بولتا وہ وہاں سے چل دیا، جبکہ وہ جو اپنے خیالوں میں غم تھی ایک دم پھر سرخ ہوگئی، اور پھر ایک بھرپور مسکراہٹ اسکے چہرے پر در آئی۔ ’’لو یو ٹو ہارون شاہ، لو یو ٹو۔۔۔۔ زندگی ہوں تم میری‘‘ خود سے کہتے وہ اپنی گاڑی کی طرف چل دی۔

Dive into the Depths of Emotion and Discovery with ‘Uraan’ by Qanita Khadija: A Tale of Love, Identity, and the Life Journey Within.

Uraan by Qanita Khadija in Pdf

Uraan by Qanita Khadija

ناول کا پی ڈی ایف ڈاؤن لوڈکرنے کے لیے ڈاؤن لوڈ کے بٹن پرکلک کریں

👇

or

ناول کوپڑھنے کے لیےیہا ں کلک کریں

👇

Novel Galaxy is a world of Urdu novels based on social issues, rude heroes novels, Urdu revenge base novels, Urdu E-book, Urdu digest, Urdu horror and thriller novels, etc. All novels are also available online and in PDF form.

Top Categories of Urdu Novels 

 Here, you will find a list of Urdu novels from all categories that can easily be downloaded in PDF format and saved into your devices/mobile with just one click.

There’s no content to show here yet.

You might also like these NOVELS

Leave a Comment